Thursday, January 12, 2012

مالک کی رکھیل پتنی کو چودا


میں شیکھر آپکے لِئے ایک سٹوری لیکر آیا ہُوں میری اُمر 26 سال ہے میرے گھر میں ماں ایک چھوٹا بھائی اؤر دو بہن ہے میرے پِتاجی کے دیہاںت کے باد میںنے 12ویں پاس کرکے پڈھائی چھوڑ دی اؤر گھر کے پالن پوشن میں جُٹ گیا میری بہن کی شادی ہمنے ایک اَچّھے کھاندان میں پکّی کر دی مگر اُنہوںنے پہلے دو لاکھ رُپیے دہیز ماںگا تھا۔


میں ایک چھوٹے سے کرکھانے میں کام کرتا تھا کارکھانے کا مالِک 55 سال کا بُڈّا اؤر ایک اَمیر آدمی تھا پرنتُ اُسکی بیوی ایک سُںدر، سُشیل، سیکسی اؤر بیہد کھُوبسُورت لڑکی تھی وہ اُسکی پتنی نہیں بلکِ اُسکی رکھیل تھی۔ وہ پہلے ایک ہائی پروپھائیل کالگرل تھی اؤر اَبھی بھی وہ لڑکِیوں سے جِسمپھروشی کا دھںدھا کرواتی تھی ہمارے مالِک نے اُسے ساری پاور دے رکھی تھی اؤر کھُد اُسکی گاںڈ کے پیچھے دُم ہِلاتا پھِرتا تھا۔

میںنے اُسے پٹانے کے بارے میں سوچا کیُوںکِ اَگر وہ پٹ گیی تو مُجھے اِس کارکھانے کا میںنیجر بنا دیگی ایک دِن وہ اُوپر کھڑی دیکھ رہی تھی تو میںنے اُسے دیکھکر ایک پیاری سی سمائیل دے دی۔ وہ بھی مُجھے دیکر ہںس پڑی۔ اَب روز ایسا ہی چلتا ایک دِن جب میں کھانا کھا رہا تو وہ مُجھے دیکھ رہی تھی تو میںنے اُسے دُور سے ہی کھانے کا نیوتا دِیا تو وہ مُجھے ن کہکر تھیںکس کرکے چلی گیّ۔

ایک دِن اُسنے مُجھے روکّر میرا نام پُوچھا تو میںنے شیکھر کہ دِیا اِس پر اُسنے اَپنا نام شبنم بتایا اؤر اَپنا پتا دیکر چلی گیی اؤر رات کو 10 بجے باد آنے کو کہا میں رات کو ٹھیک 10 بجے پہُچ میںنے ڈور بیل بجایی تو اُسنے درواجا کھولا اؤر میرا سواگت کرتے ہُئے مُجھے اَپنے لِوِںگ رُوم میں لے گیی میںنے اُسّے پُوچھا کِ تُمہارے پتِ کہاں ہے تو وہ بولی کی اُنہیں تو میںنے کھانے میں نیںد کی گولی دیکر سُلا دِیا ہے اَب وے سُبہ تک نہیں اُٹھیںگے۔

وہاں پر اُسنے مُجھے ایک بڑھِیا سی وائین پِلائی۔ وائین پیکر میری ہِمّت بڈھ گیی اؤر میںنے اُسکے گال پر کِس کر دِیا۔ کِس کرنے کے باد ووہ کھڑی ہُیی اؤر دؤڑکر اَپنے بیڈرُوم میں چلی گیی اؤر درواجا بںد کر دِیا۔ میری لاکھ مِنّتیں کرنے کے باد آدھے گھںٹے باد اُسنے جب درواجا کھولا تو میں اُسے دیکھ کر ستبدھ رہ گیا کیُوںکِ اُسکے سیکسی سریر پر پیںٹی نام کا بھی وستر نہیں تھا۔

یہ دیکھ میں اُسکے ہوںٹھوں کو جور جور سے چُوسنے لگا اؤر جیسے ہی میںنے اُسے بیڈ پر لے جانا چاہا تو وہ بولی ایسے نہیں جانیمن ایک ایک کرکے اَپنے کپڈے اُتارو اؤر ایک ایک کدم بڈھاّو مُجھے اُسکا آئیڈِیا بڑا ہی روماںٹِک لگا میں اُسّے اَب ماتر ایک کدم کی دُوری پر تھا اَب میںنے ایک اَںڈروِیر بچی تھی اُسے بھی اُتر پھیکا اؤر مُجھے اَپنے لنڈ پر شرم آ رہی تھی کِ کہیں وہ اِسے گدھے کا لںڈ ن کہنے لگے پر وہ میرے لںڈ کو دیکھتے ہی مُسکُرائی اؤر بولی کِتنا بڑا اؤر پیارا لںڈ ہے یہ سُنکر مُجھے میرے لںڈ پر اَب گرو مہسُوس ہونے لگا۔

تبھی میںنے اُسکے بُوبس کو جور جور سے دبانے لگا اؤر وہ ٹھوس ہو گئے پھِر میںنے اُنسے ستنپان کِیا اُسکے باد جب میں اُسکی چُوت پر ہاتھ پھیرنے لگا تو مُجھسے وہ کہنے لگی ڈارلِںگ اِسے چاٹو نا۔ میںنے اُسّے کہ دِیا آپکا ہُکم سر آںکھوں پر اُسکی چُوت دیکھکر لگ رہا تھا کِ وہ اَنیکو لںڈو کی چوٹ جھیل چُکی ہے پھِر میںنے پوسِشن 69 میں آکر 15 مِنٹ تک اُسکی چُوت اؤر اُسنے میرا لںڈ چُوسا پھِر وہ بولی کِ جان اَب رہا نہیں جاتا اَب اِس چُوت کی پیاس بُجھاّو۔ یہ سُنتے ہی میںنے اُسکی چُوت پر جور سے دو جھٹکے مارے اؤر پُورا لںڈ اُسکی چُوت میں چلا گیا اؤر میں اُسے چود رہا تھا تب وہ میرا کم اون! کم اون! کہکر میرا ساتھ دے رہی تھی اُس رات اُسے 5 تریکو سے چودنے کے باد اَب وہ مُجھسے روز چُدوانے لگی اؤر اُسنے مُجھے اَپنے دھںدھے کا دلال بنا لِیا اؤر اَپنے کارکھانے کے میںنیجر کے پد پر نِیُکت کر لِیا۔

اَب میں دلالی میں روز 1000 رُوپیے کما لیتا ہُوں اؤر کُچھ دِنوں میں میں اَپنی بہن کی شادی بھی کر دُوں گا۔

By ß๏๏ฑ with No comments

0 comments:

Post a Comment

EMail : PkMasti@aol.com
Yahoo : Jan3y.J4na@yahoo.com

    • Popular
    • Categories
    • Archives