Thursday, January 12, 2012

لڑکیوں اور عورتوں کی گانڈ مارنے کے درست طریقے

میری گذشتہ کہانی "بیوی کی مدد سے شازیہ کا ریپ" میں میری بیوی عروج نے آپ کو یہ تو بتایا تھا کہ میں نے اس کے ساتھ مل کر کیسے شازیہ کو چودا لیکن ساتھ ہی ساتھ عروج نے یہ بھی امیدرہ دیا تھا کہ میں نے بعد میں اس بچی کی گانڈ بھی پھاڑ ڈالی تھی۔

جی دوستو! بات تو واقعتاً ایسے ہی ہے لیکن شازیہ کی گانڈ "پھاڑنے" کی وجہ یہ تھی کہ مجھے معلوم ہو چکا تھا کہ اسے زبردستی اور وحشیانہ انداز میں چدنے میں ہی مزا آتا ہے اور جب میں نے اور میری بیوی عروج نے مل کر اس کا ریپ کیا تھا تب بھی وہ بظاہر رو دھو رہی تھی لیکن دراصل مزے لے رہی تھی اور یہی وجہ تھی کہ جب میں نے پہلی بار اس کی گانڈ ماری تو بے حد وحشیانہ طریقے سے اور درد دے دے کر تا کہ وہ خوب مزے لے سکے۔

شازیہ کی حد تک تو بات ٹھیک ہے لیکن میں نے اپنی بیوی عروج کو جب پہلی بار گانڈ میں چودا تھا تو اس سے پہلے وہ اینل سیکس سے متنفر تھی جس کی وجہ یہ تھی کہ شادی سے کافی عرصہ پہلے جب وہ ابھی بچی تھی یعنی 11 یا 12 سال کی کم سنی میں اس کے ایک رشتہ دار نے زبردستی اس کی گانڈ مار دی تھی اور وہ اس قدر درد کی شدت سے گزری تھی کہ بے ہوش تو خیر وہ ہو ہی گئی تھی لیکن نا صرف چدائی کے دوران بلکہ بعد میں بھی کئی دن تک پاخانے کے ساتھ اس کی گانڈ سے ہلکا ہلکا خون آتا تھا اور وہ چل پھر بھی نہیں سکتی تھی جسے اس نے ٹانگ میں چوٹ لگنے کے باعث پاؤں میں آنے والی موچ کا بہانہ کر کے گھر والوں سے چھپایا تھا۔

لیکن میں تو ہمیشہ سے لڑکیوں کو بہت پیار سے اور گانڈ مروانے پر آمادہ کر کے سیکس کرنے کا قائل ہوں اور یہی میرا تجربہ ہے کہ اگر درست طریقے سے اور لڑکی کی رضامندی سے اس کی گانڈ ماری جائے تو اسے نہ صرف درد نہیں ہوتا بلکہ وہ بھی اسے اسی طرح انجوائے کرتی ہے جیسے لڑکا یا مرد گانڈ مارتے ہوئے کرتا ہے۔ بالکل اسی طرح میں نے عروج کو آہستہ آہستہ اینل سیکس پر آمادہ کر کے پہلی دفعہ اس کی گانڈ ماری اور یقین کریں کہ اس کے بعد وہ ہمیشہ خود اپنی مرضی اور خواہش سے تقریباً ہر تیسرے دن گانڈ مرواتی ہے اور اسے چوت کے ساتھ ساتھ گانڈ مروانے میں بھی بے حد لطف آتا ہے۔ میں آپ کو آج یہ بتاتا ہوں کہ میں نے کیسے عروج کی گانڈ ماری تھی کہ وہ فی الواقعہ گانڈ مروانے کی دیوانی ہو گئی ہے۔

آپ سب نے بھی گانڈ مارنے اور مروانے پر بہت سی کہانیاں تو پڑھی ہی ہوں گی جن میں سے کچھ اچھی بھی ہوتی ہیں لیکن اکثر غلط اور جھوٹ ہوتی ہیں۔ ایسا لگتا ہے یہ کہانی نہیں بلکہ کہانی نویس کی خواہش اور ہوس ہے جو کبھی پوری نہیں ہو سکی۔ گانڈ مارنے یا مروانے کی کہانیوں میں اس لطف انگیز سیکس یعنی (اینل سیکس) کا درست طریقہ کسی نے نہیں لکھا ہوتا جو پڑھنے والے لڑکے لڑکیوں کو اس گانڈ مارنے اور مروانے سے اصل زندگی میں عمل کر کے درست طور پر لطف اندوز ہونے کا ذریعہ بن سکے۔

اگر ان کہانیوں کو سچ سمجھا جائے تو گانڈ مارنا بہت آسان لگتا ہے۔ بس، لنڈ کے ٹوپے کو گانڈ کے منہ پر رکھو اور زور سے دھکّا لگاؤ- ہو گیا۔۔۔ لڑکی زور سے چلّائے گی۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔ "اُو اُو اُو اُوئی مر گئی۔۔۔۔۔۔۔۔۔ میری گانڈ پھاڑ دی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔"

اور تھوڑی دیر بعد اُسے مزا آنے لگے گا! لیکن در اصل ایسا نہیں ہوتا ہے۔

میں نے تقریباً ہر عمر کی بہت سی لڑکیوں اور عورتوں کی گانڈ ماری ہے اور میں آپ کو یقین دلانا چاہتا ہوں کہ ایسے گانڈ مارنا کہ دونوں فریق لطف اندوز ہوں، اتنا آسان نہیں ہے بلکہ میری نظر میں تو ایسے چوت لینا بھی اتنا آسان نہیں ہوتا جتنا یہ لوگ گانڈ مارنا سمجھتے ہیں۔

اگر آپ سچ مچ میں گانڈ مارنا چاہتے ہو اور آپ چاہتے ہو کہ لڑکی کو بھی اتنا ہی مزا آئے جتنا آپ کو آتا ہے اور وہ بار بار آپ سے گانڈ مروانے کی چاہت رکھے تو آپ کو میں صحیح طریقہ بتاتا ہوں۔ دھیان سے پڑھیے آپ کی خواہش پوری ہوگی۔۔۔۔

اِس طریقہ میں لڑکی کی گانڈ کی بات کی گئی ہے لیکن اگر آپ لڑکے کی گانڈ مارنا چاہتے ہیں تو بھی یہی کلیہ لاگو ہوگا کیونکہ گانڈ دونوں کی ایک جیسی ہوتی ہے۔

ضروری باتیں :
گانڈ مارنے سے پہلے کچھ ضروری باتوں کا دھیان رکھنا ہوگا۔ اگر اِن باتوں کا دھیان رکھا گیا تو لڑکی کو بھی اتنا ہی مزا آئے گا جتنا آپ کو اور وہ آپ سے بار بار گانڈ مروانے کی کوشش کرے گی۔ اگر اِن ضروری باتوں کو نظر انداز کر دِیا تو ہو سکتا ہے آپ گانڈ کبھی مار ہی نہ پائیں !

لڑکی کی منظوری
سب سے پہلے یہ بہت ضروری ہے کہ لڑکی گانڈ مروانے کے لیے راضی ہو۔ اس کے لیے آپ کو اُسے یہ بھروسا دِلانا ہوگا کہ آپ زبردستی نہیں کریں گے اور اگر کسی بھی وقت وہ منع کرتی ہے تو آپ رُک جائیں گے۔ لڑکی کو زیادہ درد نہیں ہونا چاہیے۔ درد کو کم کرنے کا طریقہ اِس کہانی میں آگے بتایا گیا ہے۔

گانڈ کی بناوٹ
گانڈ چدائی کے لیے نہیں بنی لہٰذا اس کی بناوٹ، پوزیشن اور ساخت ایسی ہے کہ مرد کا لوڑا آسانی سے اُس میں داخل نہیں ہو سکتا (جیسا کہ چوت میں ہو سکتا ہے)۔ اس لیے آپ کو گانڈ کی بناوٹ کے بارے میں علم ہونا چاہیے۔

گانڈ کا کام جسم سے فضلہ باہر نکالنا ہے۔ گانڈ کے منہ کی طرف دو چھلے دار عضلات (رِنگ مسَلز) ہوتے ہیں جو کہ اپنی اِچّھا سے کھولے یا بند کِئے جا سکتے ہیں۔ ایک چھلّا بالکل منہ پر ہوتا ہے اور دوسرا تقریباً پون انچ اندر کی طرف ہوتا ہے۔ اِن عضلات کو آپ اپنی گانڈ میں محسوس کر سکتے ہیں۔ اپنی بیچ کی انگلی پر تیل یا کریم لگا کر اپنی گانڈ میں ڈالنے کی کوشش کریں۔ جو باہر کا مسل ہے وہ اپنے آپ سِمٹ کر سکڑ جائے گا کیونکہ اُس کا کام ہے باہر کی چیز کو اندر جانے سے روکنا ! اپنے آپ کو تھوڑا ریلکس کرو اور گانڈ کے مسل کو ڈھیلا کرو تو آپ کی انگلی تھوڑا اندر چلی جائے گی۔ اب آپ دوسرے مسل کو محسوس کر سکیں گے جو کہ آپ کی انگلی کو اور اندر نہیں جانے دے گا۔ اِس مسل کو بھی آپ ڈھیلا کر سکتے ہیں اور تھوڑی کوشش کے بعد آپ کی انگلی اس کے بھی پار ہو جائے گی۔ جب دوسرا مسل پار کر لیا تو پھر کوئی اور رُکاوٹ نہیں ہوگی اور آپ کی انگلی آسانی سے اندر جا سکتی ہے۔

گانڈ کے یہ مسلز کافی مظبوط ہوتے ہیں اور ان کو آسانی سے پار نہیں کِیا جا سکتا۔ خاص طور سے اگر لڑکی کی مرضی نا ہو تو۔ دوسری بات یہ بھی ہے کہ انگلی کے مُقابلے میں لنڈ کا گھیرا (سائیز) زیادہ ہوتا ہے، اِس باعث بھی گانڈ کے اندر ڈالنا مشکل ہوتا ہے۔
گانڈ کی ایک خاصیت ہے کہ چوت کی طرح اس میں کوئی مائع (لِکوِڈ) چیز کا اثر نہیں ہوتا۔ جب لڑکی سیکس کی لیے تیار ہوتی ہے تو اُس کی چوت میں اپنے آپ گیلاپن ہوتا ہے جس سے لنڈ کا دخول آسان ہو جاتا ہے۔ یہ اس عمل کا حصہ ہے کیونکہ چوت بنی ہی اِس کام کے لیے ہے۔ گانڈ میں کوئی ایسی چکناہٹ نہیں ہوتی اس لیے وہ ہمیشہ سوکھی ہی رہتی ہے۔ ایسی حالت میں لنڈ کے دخول سے نا کیول لڑکی کو درد ہوگا بلکہ پُرُش کو بھی مزا نہیں آئے گا۔ کچھ دیر کے بعد لنڈ میں بھی درد ہو سکتا ہے تو چُدائی کا مزا کِرکِرا ہو سکتا ہے۔
گانڈ کے اِن عضلات کے اِرد گرد بہت سی نسیں ہوتی ہیں جن میں حساسیت بہت زیادہ ہوتی ہے۔ اِسی لیے گانڈ مروانے کے دوران لڑکی کو بھی بہت مزا آتا ہے، شرط یہ ہے کہ اُسے درد نا ہو۔ گانڈ ٹھیک سے نہ ماری جائے تو لڑکی کو بہت درد ہوتا ہے۔

گانڈ کی بناوٹ سے یہ صاف ہو گیا ہے کہ:
1۔ گانڈ میں کوئی باہر کی چیز آسانی سے اندر نہیں جا سکتی۔
2۔ گانڈ کے اندر کچھ بھی ڈالنے کے لیے گانڈ کے عضلات کو ڈھیلا کرنا ضروری ہے۔
3۔ گانڈ کے مسلز کو لڑکی اپنی مرضی سے ڈھیلا یا ٹائٹ کر سکتی ہے۔
4۔ گانڈ کو بیرونی چکناہٹ کی ضرورت ہوتی ہے۔
5۔ گانڈ میں نرو اینڈنگس ہوتی ہیں جس سے لڑکی کو گانڈ مروانے میں مزا آتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دنیا بھر کے بے شمار لڑکے اور لڑکیاں خوشی خوشی گانڈ مرواتے ہیں۔

گانڈ کی تیاری
کیونکہ گانڈ چدائی کے لیے نہیں بنی لہٰذا تو یہ آپ کی ذمہ داری بنتی ہے کہ آپ اُسے اِس کام کے لیے تیار کریں۔ یہ تیاری فوراً نہیں ہو سکتی۔ اس میں 2-3 دِن سے لیکر 6-7 دِن تک لگ سکتے ہیں۔ جِتنی آرام سے تیاری کریں گے، لڑکی کو آپ پر اتنا ہی بھروسا بڑھے گا اور آپ کو بھی اتنا ہی سُکھ گانڈ مارنے میں مِلے گا۔ اس لیے جلدبازی مت کریں۔

گانڈ کی صفائی

اگر لڑکی نے منظوری دے دی ہے اور وہ گانڈ مروانے کا تجربہ کرنا چاہتی ہے تو اپنے آپ وہ اپنی گانڈ کو اچھی طرح سے صاف کرکے آئے گی۔ گانڈ اگر گندی ہوگی تو سارا مزا خراب ہو جائے گا۔ سب سے مزیدار طریقہ ہے جب آپ دونوں ایک ساتھ غسل کرو اور اِس دوران ایک دوسرے کے جنسی اعضاء کو سہلاؤ اور صاف کرو۔

ضروری سامان
صاف بِستر
1-2 سخت تکیے

1-2 چھوٹے تولیے

1 موٹی موم بتی (1۔5 – 2۔0 انچ چوڑی، 6-8 انچ لمبی)

1 ٹیوب کے وائی جیلی / سرسوں کا تیل (تیل سے جیلی بہتر ہے)

ٹاڈالفل ٹیبلیٹ (گانڈ مارنے کے لیے لنڈ سخت ہونا بہت ضروری ہے۔ اگر آپ کا لنڈ نرم ہے یا پوری طرح کھڑا نہیں ہے تو ایک ٹاڈالفل یا سِلڈنفل ٹیبلیٹ سِیلِس/وِیاگرا لے سکتے ہیں جیسے فورزیسٹ 10 یا فورزیسٹ 20۔ یہ گولیاں ڈاکٹر سے پوچھ کر ہی لینی چاہییں۔ اِس گولی کا اثر 24 سے 36 گھنٹے تک رہتا ہے۔ گانڈ مارنے سے 15-20 منٹ پہلے لے سکتے ہیں۔ کبھی بھی ایک گولی سے زیادہ نہ لیں!

کے وائی جیلی کی ٹیوب 90/ اور فورزیسٹ (20/ 10) کسی بھی کیمسٹ کی دُکان پر مِل جائے گی۔

آغاز

دھیان رکھو کہ آپ کی انگلی کے ناخن بڑھے ہوئے نہیں ہیں اور ٹھیک طرح سے کٹے ہوئے ہیں۔ ناخن کے کِنارے تیز نہیں ہونے چاہیے، اُنہیں ٹھیک سے فائیل کر لو۔ اگر ناخن بڑھے ہوں گے تو جب انگلی لڑکی کی گانڈ میں ڈالوگے تو اُسے لگ سکتا ہے۔

لڑکی کو گانڈ کی بناوٹ کے بارے میں اور رِنگ مسَلز کو کِس طرح سے ڈھیلا یا ٹائٹ کر سکتے ہیں، کے بارے میں بتاؤ۔

اب پیار سے لڑکی کے کپڑے اُتارو اور ایک صاف بِستر پر پیٹھ کے بل لِٹا دو۔ اُس کی ٹانگوں کو موڑ دو اور تھوڑا کھول دو۔ اب اُس کے چوتڑوں کے نیچے 1-2 سخت تکیے رکھ کر اُس کے چوتڑ اوپر کی طرف اُٹھا دو جس سے اُس کی چوت اور گانڈ صاف دِکھائی دے۔ خود بھی پوری طرح ننگے ہو جاؤ۔ اب اُس سے پیار بھاری باتیں کرو اور پُورے جسم کو سہلاؤ، خاص طور سے اُس کے گال، گردن، پستان، چُوچُک، پیٹ، رانیں اور ٹانگیں !

کچھ دیر تک اُس کی چوت اور گانڈ کو ہاتھ نا لگائیں۔ تھوڑی دیر میں لڑکی کی چُوچی سخت ہو جائے گی اور وہ اپنی ٹانگیں اور کھول دے گی۔ اب اُس کی چوت کو پیار سے سہلانا شروع کرو جس سے وہ اُتّیجِت ہو جائے اور چوت میں سے پانی کا رِساو ہونے لگے۔

اب لڑکی چُدائی کے لیے تیار ہے پر ہمارا ارادہ اُس کی گانڈ مارنے کا ہے۔ اپنی ایک انگلی پر اچھی طرح سے کے وائی جیلی (یا سرسوں کا تیل) لگا کر لڑکی کی گانڈ کے منہ پر سہلاؤ۔ ابھی انگلی اندر ڈالنے کی کوشش نا کرو۔ اُسے اپنے عضلات باری باری ڈھیلے اور ٹائٹ کرنے کو کہو۔ آپ اپنی انگلی پر اُس کے رِنگ مسَلز کو محسوس کر سکوگے۔ لڑکی سے پیاری پیاری باتیں کرو اور اُس کو ریلکس ہونے کو کہو۔ تھوڑی دیر میں جب لڑکی ریلکس ہونے لگے گی تو اُس کی گانڈ بھی تھوڑی ڈھیلی ہو جائے گی۔

اب اپنی انگلی پر تھوڑی اور جیلی لگا کر دھیرے دھیرے اُس کی گانڈ کے اندر دھکیلو۔ اگر لڑکی گانڈ کو ٹائٹ کر لے تو پھر اُسے یقین دِلاؤ کہ اُسے درد نہیں ہونے دوگے۔ ضرورت ہو تو انگلی باہر نکال لو اور اُس کی چوت، رانیں اور مموں کو پیار سے سہلاؤ۔ جب لڑکی دوبارہ ریلکس ہو جائے تو انگلی پر جیلی لگا کر ایک بار اور گانڈ میں ڈالنے کی کوشش کرو، جلدبازی نہیں کرنا۔ گانڈ کی بیرونی رِنگ مَسَل کو دھیرے دھیرے ڈھیلا کر کے انگلی کو تقریباً آدھا انچ اندر ڈال دو۔ اب دھیرے دھیرے انگلی کو آدھا انچ تک اندر باہر کرو۔ دیکھو کہ لڑکی کو درد نہیں ہو رہا ہے۔ اگر لڑکی خوش نہیں ہے تو انگلی اندر رکھ کر رُک جاؤ اور تھوڑی دیر بعد پھر شروع کرو۔

اگر لڑکی خوش ہے تو دھیرے دھیرے انگلی کو اور اندر کرو۔ کچھ دور تک تو انگلی اندر چلی جائے گی پر پھر ایسا لگے گا جیسے آگے کوئی رُکاوٹ ہے۔ یہ اُس کی گانڈ کی دوسری رِنگ مَسَل ہے۔ اس کو پار کرنے کی لیے ایک بار پھر لڑکی کو رِنگ مَسَل ڈھیلا کرنے کے لیے بولو۔ (اِس وقت لڑکی کو اپنی گانڈ پر نیچے کے طرف زور لگانا چاہیے جیسا کہ پاٹی کرتے وقت لگاتے ہیں، ایسا کرنے سے رِنگ مَسَل کھُل جائے گی اور آپ اپنی انگلی اُس کے پار لے جا سکتے ہیں)۔ اگر لڑکی ریلکس نہیں کرتی ہے تو آپ کو صبر کرتے ہوئے دھیرے دھیرے انگلی سے اُس کے رِنگ مَسَل کو کھولنے کی کوشش کرنی ہوگی۔ یاد رہے۔۔۔ کوئی کام جلدبازی میں نہ کرو۔ دیکھا جائے تو اِس کام میں بھی آپ کافی مزا لے سکتے ہو۔

کسی بھی وقت اگر لڑکی کو تکلیف ہونے لگے تو انگلی فوراً باہر نکال لو اور اُس کو پیار کرو۔ اُسے یہ پُورا یقین ہونا چاہیے کہ گانڈ مارتے ہوئے آپ اُسے تکلیف نہیں دوگے۔

جب انگلی دوسری رِنگ مَسَل کو پار کر جائے تو آپ کی انگلی نے منزل پا لی ہے۔ اب آپ آرام سے انگلی کو جتنا اندر ڈالنا چاہو ڈال سکتے ہو۔ دھیان رہے کہ انگلی پر جیلی یا تیل اچھی طرح لگا ہو۔ اگر سوکھ گیا ہے تو انگلی باہر نِکل کر دوبارہ لگا لو اور پھر سے دھیرے دھیرے اندر ڈالو۔ اگر ایک بار انگلی اندر چلی گئی ہے تو اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ اب ہمیشہ آسانی سے چلی جائے گی۔ گانڈ کے مسلز تو پھر سے بند ہو گئے ہوں گے، اس لیے ہر بار گانڈ میں دھیرے دھیرے اور پیار کے ساتھ ہی دخول کرنا ہے۔

جب آپ کی ایک انگلی گانڈ کے اندر باہر جانے لگے اور لڑکی کو تکلیف نہیں ہو رہی ہو تو آپ یہی عمل دو انگلیوں پر جیلی لگا کر کوشش کرو۔ اس میں شروع میں تھوڑی مشکل ہوگی کیونکہ گانڈ کا چھید چھوٹا ہوتا ہے۔ ایک انگلی تو چلی جاتی ہے پر دو انگلیاں موٹی ہوتی ہیں۔ لیکن یہ کام بھی پیار سے اور آہستگی سے ہو جائے گا۔ آپ محسوس کروگے کہ جیسے جیسے لڑکی کو آپ پر بھروسا بڑھے گا وہ اِس کام میں آپ کو سہولت دے گی اور تھوڑا بہت درد بھی برداشت کرنے لگے گی۔

جب آپ کی دو انگلیاں پوری طرح اندر چلی جائیں تو دھیرے دھیرے انگلیوں کو دونوں طرف گھُمانا شروع کرو، اس سے گانڈ کا پُورا چھید ڈھیلا ہوگا۔ ساتھ ہی ساتھ انگلیوں کو اندر باہر بھی کرو۔

ہو سکتا ہے اتنا سب کچھ کرنے کے بعد آپ دونوں تھک گئے ہوں۔ اگر ایسا ہے تو انگلیاں باہر نکال لو اور آپ دونوں کچھ اور کاروائی کر سکتے ہو۔ اگر لڑکی خوش ہے تو وہ آپ کے لنڈ کو منہ میں لے کر چُوس سکتی ہے جس سے آپ کے تنے ہوئے لنڈ کو آرام مِلے گا۔ یہ میں اِس لیے کہن رہا ہوں کیونکہ انگلی کرنے کے چکّر میں آپ کا لنڈ ضرور تیار ہو گیا ہوگا۔ پر ابھی منزل بہت دور ہے اور آپ کو آہستگی سے کام کرنا ہوگا۔ دوسری بات یہ ہے کہ جو لڑکی گانڈ مروانے کے لیے تیار ہوگی وہ لنڈ تو چُوس ہی لیتی ہوگی۔

چلیے، آپ دونوں نے آرام کر لِیا۔ اب آگے بڑھتے ہیں !

اب ایک موٹی موم بتی لو جسکا گھیرا آپ کے تنے ہوئے لنڈ کے برابر ہو۔ اس کی لمبائی 6 انچ سے کم نہیں ہونی چاہیے۔ موم بتی کو اچھی طرح چکنا کر لو۔ موم بتی کا سِرا تیز (شارپ) نہیں ہونا چاہیے۔ اُسے چاقو سے چھیل کرکے لنڈ نُما شیپ دے دو۔ اب آگے کے 3-4 انچ پر اچھی طرح سے جیلی لگا لو۔

ایک بار پھر لڑکی کو ریلکس ہونے کے لیے بولو اور اُس کی گانڈ کے اندر اور باہر بھی اچھی طرح سے جیلی لگا دو۔ کبھی بھی جیلی لگانے میں کنجوسی نا کرو۔

اب موم بتی کا سِرا گانڈ کے منہ پر رکھ کر دھیرے دھیرے اندر ڈالنے کی کوشش کرو۔ شروع میں مشکل ہوگی۔ اگر ضرورت ہو تو گانڈ میں ایک انگلی ڈال کر اُس کی دونوں رِنگ مسَلز کو ڈھیلا کر لو۔ لڑکی کو بھی گانڈ ڈھیلی کرنے کو کہو۔ جب موم بتی تقریباً آدھا انچ اندر چلی جائے تو ایک دو بار اتنا ہی اندر باہر کرو۔ لڑکی کے امیدروں کا دھیان رکھو کہ اُسے کوئی تکلیف تو نہیں ہو رہی۔ اُس سے باتیں کرتے رہو۔ جب لڑکی آدھا انچ تک اندر باہر کو برداشت کرنے لگے تو آپ موم بتی کو گھُماتے ہوئے اور اندر ڈالنے کی کوشش کرو۔ (دیکھ لو کہیں جیلی سوکھ نہ گئی ہو۔ اگر ضرورت ہو تو مزید لگا لو)۔

موم بتی تھوڑا اور اندر جائے گی اور پھر رُک جائے گی۔ اب تو آپ کو معلوم ہے یہ کیوں رُکی ہے، دوسری رِنگ مَسَل سامنے ہے۔ لڑکی کے پستانوں کو چُومو اور اُس کی چوت کو سہلاؤ۔ ساتھ ہی اُسے ریلکس کرنے اور گانڈ کو ڈھیلا کرنے کو کہو۔ جیسے ہی وہ گانڈ کو ریلکس کرے گی، موم بتی آرام سے اندر چلی جائے گی۔

اب تھوڑا انتظار کرو جس سے لڑکی موم بتی کی موٹائی کو اپنی گانڈ میں محسوس کر سکے اور اُس کا جسم اِس نئے احساس کو سمجھ سکے۔ تھوڑی دیر کے بعد موم بتی کو دھیرے دھیرے اندر باہر کرنا شروع کرو۔ باہر کرتے وقت لڑکی کو کوئی تکلیف نہیں ہوگی پر اندر کرتے وقت آپ کو دھیان رکھنا ہوگا کہ جلدبازی نہ ہو۔ اگر جیلی کم ہو گئی ہو یا سوکھ گئی ہو تو اور لگا لو۔ اِس طرح موم بتی سے آپ اُس کی گانڈ کو چودنا شروع کرو۔

دھیرے دھیرے لڑکی کی تکلیف کم ہو کر ختم ہو جائے گی اور وہ مزا محسوس کرنے لگے گی۔ اب آپ 4-5 انچ تک موم بتی اندر باہر کر سکتے ہو۔ جب تک لڑکی چاہے اُسے موم بتی سے چودتے رہو اور پھر دھیرے دھیرے موم بتی کو باہر نکال لو۔ یہ کام بھی دھیرے دھیرے ہی کرنا چاہیے۔

میری رائے میں آپ کو یہ انگلی اور موم بتی والا عمل دو تین دِن تک کرنا چاہیے۔ ویسے بھی اب تک آپ دونوں تھک گئے ہوں گے اور صبر کا پھل ہمیشہ میٹھا ہوتا ہے۔

امید ہے آپ نے دو تین دِن تک بتایا ہوا عمل کر لیا ہے اور اب لڑکی اپنی گانڈ کے مسلز کو ڈھیلا اور ٹائٹ کرنا سیکھ گئی ہے۔

گانڈ مارنا
مُبارک ہو! اب آپ کی ساتھی لڑکی گانڈ مروانے کے لیے پوری طرح تیار ہے۔ جس دن کا انتظار تھا وہ آخر آ ہی گیا۔ امید ہے آپ بھی تیار ہوں گے۔ گانڈ مارنے کے لیے ضروری ہے کہ آپ کا لنڈ مظبوطی سے کھڑا ہو۔ ویسے تو پہلی بار گانڈ مارنے کے تصور سے آپ کا لنڈ اپنے آپ ہی تنا ہوا ہوگا لیکن اگر ایسا نہیں ہے (اور آپ کے ڈاکٹر کی طرف سے آپ کو اجازت ہے) تو آپ فورزیسٹ 10 یا 20 کی ایک گولی تقریباً 30 منٹ پہلے لے سکتے ہو۔

اگر لڑکی بھروسے والی نہیں ہے تو کنڈوم کا استعمال ضرور کرو کیونکہ ایچ آئی وی کا خطرہ گانڈ مارنے میں سب سے زیادہ ہوتا ہے۔ لیکن اگر آپ ایک دوسرے کو جانتے ہو اور ایک دوسرے پر بھروسا ہے تو کنڈوم کی ضرورت نہیں ہے۔

ایک ضروری بات اور ہے- کبھی بھی گانڈ مارنے کے دوران یا اُس کے ایکدم بعد، آپ نے لنڈ کو لڑکی کی چوت میں نہیں ڈالو۔ ایسا کرنے سے لڑکی کو چوت میں انفیکشن ہو سکتا ہے۔ اگر چوت مارنی ہے تو پہلے لنڈ کو اچھی طرح سے دھو لو۔

گانڈ مارنے کی پوزیشنز

گانڈ مارنے کی دو پوزیشن ہیں۔ اِن دو بنیادی پوزیشنز کے کئی انداز ہو سکتے ہیں جو آپ اپنے آپ بنا سکتے ہیں۔

آسن 1
اس میں لڑکی پیٹھ کے بل لیٹی ہوتی ہے جیسا اِس کہانی کے شروع میں بتایا گیا ہے اور اُس کے چوتڑ کے نیچے تکیے رکھے جاتے ہیں جس سے اُس کی گانڈ اوپر اُٹھ جائے۔ اس کو مِشنری پوزیشن یا مین سُپیریئر پوزیشن بھی کہتے ہیں۔

آسن 2
اس میں لڑکی اپنے گھُٹنے اور ہاتھوں پر ہوتی ہے اور اُس کی گانڈ کی اونچائی آپ اپنےحساب سے اوپر نیچے کر سکتے ہو۔ کچھ لڑکیاں اپنا سر نیچے بِستر پر ٹِکا دیتی ہیں اور گانڈ اوپر کی طرف اُٹھا دیتی ہیں۔ اس کو ریئر ایٹرآی یا ڈوگی سٹائل بھی کہتے ہیں۔

دونوں ہی پوزیشنز ٹھیک ہیں اور آپ کو جو اچھی لگے اُسے استعمال کرو۔ پہلی پوزیشن میں لڑکی آرام سے ہوتی ہے اور آپ اُس کے پستان اور چوت کو دیکھ اور سہلا سکتے ہو۔ لڑکی بھی آپ کو دیکھ سکتی ہے۔ آپ ایک دوسرے کو کِس کر سکتے ہو لیکن لنڈ پُورا اندر نہیں جا پاتا۔ دوسری پوزیشن میں لڑکی جلدی تھک جاتی ہے اور آپ کو دیکھ نہیں سکتی۔ آپ بھی اُس کی چوت اور مموں کو نہیں دیکھ سکتے نا ہی ٹھیک سے سہلا سکتے ہو۔ لیکن اِس پوزیشن میں لنڈ زیادہ اندر تک جا سکتا ہے۔ اس میں لڑکی بھی پیچھے کی طرف دھکّا دے کر لنڈ کو دخول میں مدد کر سکتی ہے۔

چلیے، اب گانڈ مارتے ہیں!

لڑکی کو پہلے کی طرح آرام دہ پوزیشن میں بِستر پر لِٹا دو۔ اُس کے پُورے بدن کو اچھی طرح سے پیار کرو اور اس سے میٹھی میٹھی باتیں کرو۔ اُس کے پُورے جسم کو سہلاؤ اور چُومو۔ اُس کی چوت جب گیلی ہو جائے تو اُسے انگلی سے تھوڑی دیر تک چودو اور اُس کے دانے کے اِرد گرد سہلاؤ۔ کچھ دیر میں لڑکی چُدائی کے لیے تیار ہو جائے گی۔ اب پہلے کی طرح جیلی لگا کر شروع میں ایک اور پھر دو انگلیوں سے اُس کی گانڈ کو تیار کرو۔ لڑکی اب تیار ہے، امید ہے آپ کا لنڈ بھی تیار ہوگا۔

جب پہلی بار گانڈ مارنی ہو تو میری رائے میں دوسری والی پوزیشن استعمال کرنی چاہیے (ڈوگی سٹائل) جس سے لڑکی آپ کی مدد کر سکے اور لنڈ کے دخول کو کنٹرول کر سکے۔

تو لڑکی کو ڈوگی سٹائل میں آنے کو کہو اور اُس کے چوتڑ کی اونچائی کو آپ نے لنڈ کی اونچائی کے حساب سے اُوپر نیچے کرو۔ اُس کا سر آرام سے بِستر پر رہ سکتا ہے۔ آپ نے پُورے لنڈ پر خوب اچھی طرح سے جیلی لگا لو اور لڑکی کی گانڈ کے اندر باہر بھی جیلی اچھے سے لگا لو۔ ایک بار پھر دو انگلیوں سے اُس کی گانڈ کو ڈھیلا کر لو۔

اب آپ نے لنڈ کے ٹوپے کو گانڈ کے چھید پر رکھو اور دھیرے سے اندر کے طرف دھکیلو۔ اگر آپ کا لنڈ موم بتی سے بڑا ہے تو آہستگی سے کام لو۔ دھیرے دھیرے، پیاری پیاری باتیں کرتے ہوئے اور ایک ہاتھ سے اُس کی چوت کو سہلاتے ہوئے آپ نے لنڈ کو گانڈ میں دھکیلتے رہو۔ لڑکی کو اپنی گانڈ ڈھیلی کرنے کے لیے یاد دِلاتے رہو۔

ایک بات اور ہے، جب ہم گانڈ کے مسل کو ڈھیلا کرتے ہیں تو وہ صرف ایک لمحے (سیکنڈ) کے لیے ہوتی ہے اور پھر ٹائٹ ہو جاتی ہے۔ اُس کو اپنی مرضی سے ہم زیادہ دیر تک ڈھیلا نہیں رکھ سکتے۔ آپ اِس بات کو اپنی گانڈ میں خود انگلی ڈال کر محسوس کر سکتے ہو۔ اس لیے آپ اور لڑکی کے بیچ ملاپ کی ضرورت ہے۔ جب آپ اندر کو دھکیلو، تبھی لڑکی گانڈ ڈھیلی کرے نہیں تو فائدہ نہیں ہوگا۔

اگر گانڈ کا چھید نا کھلے تو انگلی یا موم بتی کا استعمال پھر کرو اور لڑکی کو ریلکس کرنے کو کہو۔ اِس بات کا دھیان رکھو کہ لنڈ کا گھیرا کافی زیادہ ہوتا ہے اور پہلی بار آسانی سے گانڈ میں نہیں جاتا ہے۔ جیلی لگی ہونے کے باعث لنڈ پھسلتا بھی رہتا ہے اور گانڈ میں نہیں جا پاتا۔

تھوڑی کوشش کے بعد آپ کا لنڈ تقریباً 1/4 انچ اندر چلا جائے گا۔ یہاں پر رُک جاؤ اور لڑکی سے پُوچھو اُسے کیسا لگ رہا ہے۔ اگر اُسے درد ہو رہا ہو تو لنڈ باہر نکال لو، ہو سکتا ہے آپ کا لنڈ کافی بڑا ہو۔ یہ تو آپ کے لیے خوش خبری ہے! یا پھر لڑکی کو ڈر لگ رہا ہو گا!

لڑکی سے دوبارہ پُوچھو کہ وہ کیا کرنا چاہتی ہے۔ زیادہ تر لڑکیاں آپ کو دوبارہ کوشش کرنے کو کہیں گی۔ اگر نا بھی کہے تو بھی آپ دھیرج رکھو اور کچھ دیر اور موم بتی والا عمل کرو۔ میں آپ کو یقین دِلاتا ہوں کہ میرے طریقے پر چلوگے تو کوئی بھی لڑکی آپ سے گانڈ مروانے کے لیے منع نہیں کرے گی۔ میرے تجربے میں اچھی طرح سے ماری ہوئی گانڈ میں لڑکیوں کو چوت مروانے سے بھی زیادہ مزا آتا ہے۔ گانڈ کی بیرونی اور اندر کی رِنگ مسَلز کے ارد گرد بہت نرو اینڈنگس ہوتی ہیں جن میں بے حد حساسیت ہوتی ہے جس سے گانڈ مروانے کے دوران لڑکی کو بہت مزا آتا ہے۔ آپ آہستگی سے کام لو۔۔۔

تھوڑی دیر رُکنے کے بعد ایک بار پھر لنڈ کو گانڈ کے چھید پر رکھ کر اندر ڈالنے کی کوشش کرو۔ جیلی لگانا نہیں بھُولنا اور جلدبازی نہیں کرنا۔ (مجھے معلوم ہے آپ کے لنڈ کا صبر ختم ہو رہا ہوگا۔ اگر آپ سے اور نا رُکا جائے تو چوت میں ڈال کے ڈسچارج کر لو۔ فکر مت کرو آپ کا لنڈ پھر تیار ہو جائے گا۔

جب لنڈ پہلی رِنگ مَسَل کو پار کر لے تو تھوڑی دیر رُک جاؤ اور لڑکی کو ریلکس کرنے کو کہو۔ اُس کو بتاؤ کہ اب آپ لنڈ کو اور اندر نہیں کروگے۔ لڑکی خود پیچھے کی طرف دھکّا لگا کے لنڈ کو جتنا چاہے اندر کرے گی۔ اب کنٹرول لڑکی کے پاس ہے اور آپ کو اُسے تکلیف پہنچنے کی فکر نہیں کرنی۔

جب کنٹرول لڑکی کے پاس آ جاتا ہے تو آپ کو حیرت ہوگی کہ وہ کتنی آسانی سے وہ آپ کے لنڈ کو اندر لے لیتی ہے۔ آپ کو بھی لڑکی کی ٹائٹ گانڈ کا پہلی بار تجربہ ہوگا۔ آپ کا لنڈ بالکل ٹائٹ شکنجے میں جکڑا جائے گا اور آپ کو لطف محسوس ہوگا۔ زیادہ تر لوگ اس سے زیادہ روک نہیں پاتے اور کلائمکس کر جاتے ہیں۔ اگر آپ اصل لطف حاصل کرنا چاہتے ہیں تو کچھ دیر تک لنڈ کو پوری طرح اندر رہنے کا مزا اُٹھانے دو، پھر دھیرے دھیرے لنڈ کو باہر کی طرف نکالنے کی کوشش کرو۔ لڑکی کی گانڈ آپ کے لنڈ کو کس کے پکڑ لے گی۔

آپ کا لنڈ آسانی سے باہر نہیں آئے گا۔ تقریباً آدھا انچ باہر نکال کر پھر دھیرے دھیرے اندر کرو۔ یہ عمل 3-4 بار کرو۔ ہر بار اندر دھیرے دھیرے ہی کرنا ہے۔ لڑکی کو پُوچھو کہ اُسے کیسا لگ رہا ہے۔ اگر وہ ٹھیک ہے تو اب تقریباً ایک انچ تک اندر باہر کرنا شروع کرو۔ ابھی بھی دھیرے دھیرے ہی! پھر لڑکی سے پُوچھو اُس کا حال کیسا ہے۔۔۔ اگر وہ خوش ہے تو اور زیادہ اندر باہر کرنا شروع کرو۔ کوشش کرو کہ لنڈ اندر کی رِنگ مَسَل کے باہر نہ نےلا پائے۔ اگر اُس سے باہر نِکل جائے گا تو آپ کو پھر سے دھیرے دھیرے اندر ڈالنا پڑے گا اور لڑکی کو بھی مدد کرنی ہوگی۔ (پر اِس میں آپ کو مزا بھی بہت آئے گا) اِس طرح دھیرے دھیرے آپ 3-4 انچ اندر باہر کر پاؤگے۔

اگر اب تک بھی آپ کا کلائمکس نہیں ہوا ہے اور لڑکی کو بھی تکلیف نہیں ہو رہی ہے تو دھیرے دھیرے اپنا سٹروک بڑا کرتے رہو، دھیان رکھو کہ جیلی سوکھ نا گئی ہو۔ ضرورت ہو تو اور لگا لو اور پھر سے شروع ہو جاؤ۔ ایک وقت آئے گا جب لڑکی پوری طرح سے ریلکس ہو جائے گی اور آپ کا لنڈ بِنا مشکل کے پُورا اندر باہر ہونے لگے گا۔ لڑکی کو درد نہیں ہوگا اور وہ آپ کے ساتھ مزا لینے لگے گی۔ وہ اپنے آپ اپنی گانڈ کو آگے پیچھے کرنے لگے گی اور چاہے گی کہ یہ چُدائی ختم نا ہو۔۔۔۔

جب آپ کا کلائمکس ہو جائے تو آرام سے لنڈ باہر نکال لو اور لڑکی کو اچھی طرح سے پیار کرو۔ اس نے درد سہہ کر بھی آپ کو اِتنی خوشی دی ہے۔ اگر لڑکی کا کلائمکس نہیں ہوا ہے تو اُس کی چوت اور دانے کو سہلا کر اُس ڈسچارج کرواؤ۔ پھر ایک دوسرے کی بانہوں میں جِتنی دیر تک لیٹ سکتے ہو لیٹے رہو۔

جب اگلی بار اُسی لڑکی کی گانڈ مارنی ہو تو یہ نہ سمجھنا کہ اب تو اُس کی گانڈ ہمیشہ کے لیے تیار ہو گئی ہے۔ جب تک 7-8 بار اُس کی گانڈ نہیں مار لوگے، آپ کو احتیاط سے ہی کام لینا پڑے گا۔ یہ ضرور ہے کہ پہلی بار گانڈ مارنے کے مُقابلے میں بعد کے مارنے میں تھوڑا فرق تو آ جاتا ہے، پر اتنا نہیں آتا کہ لڑکی کو تکلیف نہ ہو۔

اگر آپ کچھ عرصے (1-2 مہینے) کے بعد دوبارہ گانڈ مارنے لگتے ہو تو آپ کو پورا طریقِ کار از سرِ نو اختیار کرنا پڑے گا جو یہاں بتایا گیا ہے۔

اور مزید مزا دینے کے لیے لڑکی اپنے مسلز کے ذریعے آپ کے لنڈ کو جکڑ سکتی ہے اور ڈھیل دے سکتی ہے۔ اس سے آپ کا لنڈ زیادہ دیر تک تنا رہ سکتا ہے اور آپ کو مزا بھی زیادہ آئے گا۔ جب آپ کا لنڈ پوری طرح اندر ہو تو لڑکی کو گانڈ کے عضلات کسنے اور ڈھیلا کرنے کو کہو اور اندر باہر کرو۔ یہ کام چوت سے بھی ہو سکتا ہے پر گانڈ کی بات ہی اور ہے!

گانڈ مارنے کے فائدے
گانڈ مارنے کے بہت فائدے ہیں:
1۔ دونوں کو زیادہ مزا آتا ہے کیونکہ گانڈ چوت کے مُقابلے زیادہ ٹائٹ ہوتی ہے اور اس کو زیادہ تر لوگ نہیں کر پاتے ہیں۔
2۔ بچّے ہونے کا ڈر نہیں ہوتا۔
3۔ ماہواری کے ایام کے دوران بھی اس کا مزا لے سکتے ہیں۔

پتا نہیں زیادہ تر لڑکیاں گانڈ کیوں نہیں مرواتیں! زیادہ تر لڑکیاں اِس مزے کو برداشت نہیں کر پاتی ہیں کیونکہ ہم مرد صحیح طریقہ نہیں جانتے اور شروع میں ہی اُنہیں بہت زیادہ درد کا احساس کرا دیتے ہیں۔ اُن بیچاری لڑکیوں کو پتا ہی نہیں کہ وہ کیا کھو رہی ہیں۔

امید ہے آپ کو میری یہ کہانی پسند آئی ہوگی۔ آپ ان طریقوں کا استعمال کرو اور بتاؤ کہ آپ کو مزا ملا یا نہیں اور لڑکی کو کیسا لگا۔ اگر کوئی لڑکی گانڈ مروانے کو بالکل راضی نہیں ہو تو اُسے یہ کہانی پڑھنے کو کہو۔ مجھے پُورا بھروسا ہے کہ اگر وہ آپ سے پیار کرتی ہے تو ضرور راضی ہو جائے گی۔
EMail : PkMasti@aol.com
Yahoo : Jan3y.J4na@yahoo.com

By ß๏๏ฑ with No comments

0 comments:

Post a Comment

EMail : PkMasti@aol.com
Yahoo : Jan3y.J4na@yahoo.com

    • Popular
    • Categories
    • Archives